پاکستان کا اوول میں اضافی باؤلر کھلانے پر غور

10 August 2016

محمد حفیظ کی ناقص فارم کو دیکھتے ہوئے افتخار احمد کو ان کی جگہ ڈیبیو کرایا جا سکتا ہے جو آف اسپن باؤلنگ بھی کرتے ہیں۔

لندن: انگلینڈ کے خلاف ٹیسٹ سیریز میں خسارے سے دوچار پاکستان سیریز کے چوتھے اور آخری ٹیسٹ میچ کیلئے اوول کے میدان میں اترے گا جہاں وہ اضافی باؤلر کی مدد سیریز برابر 2-2 سے برابر کرنے کی کوشش کرے گا۔

پاکستان نے لارڈز میں کھیلے گئے سیریز کے پہلے ٹیسٹ میچ میں 75 رنز سے کامیابی حاصل کر کے انگلش حریفوں کے اوسان خطا کر دیے لیکن اگلے میچ میں انگلینڈ نے عمدہ انداز میں میچ میں واپسی کرتے ہوئے اولڈ ٹریفورڈ میں 330 رنز کے بھاری مارجن سے شکست دینے کے بعد ایجبسٹن میں بھی 141 رنز سے کامیابی حاصل کر کے سیریز میں 2-1 کی برتری حاصل کر لی۔

سیریز کے دوران چند مواقعوں پر پاکستانی باؤلنگ اٹیک نے حریف ٹیم کو پریشانی سے دوچار کیا لیکن بحیثیت سے مجموعی چار رکنی باؤلنگ اٹیک لمبے اسپیل کی وجہ سے تھکاوٹ کا شکار نظر آیا جس سے باؤلرز کی افادیت واضح طور پر متاثر ہوتی نظر آئی اور اس دوران ایک اضافی باؤلر کی کمی شدت سے محسوس ہوئی۔

انگلینڈ کے ابھرتے ہوئے اسٹار کرس ووکس کے مقابلے میں مہمان ٹیم کو ایک آل راؤنڈر کی کمی شدت سے محسوس ہوئی جہں بدترین بیٹنگ فارم کا شکار محمد حفیظ غیرقانونی باؤلنگ ایکشن کے سبب باؤؒنگ کرنے سے محروم ہیں۔

اگر پاکستان کو سیریز ڈرا کرنی ہے تو اسے جمعرات سے اوول میں شروع ہونے والے ٹیسٹ میچ میں 20 وکٹیں لینی ہوں گی۔

ایجبسٹن میں ابنگلینڈ کو پہلی اننگ میں 297 رنز پر آؤٹ کرنے کے بعد دوسری اننگ میں پاکستانی باؤلرز بے بس نظر آئے اور انگلینڈ نے 445 رنز چھ کھلاڑی آؤٹ پر اننگ ڈکلیئر کی۔

ایجبسٹن میں سمیع اسلم کی متاثر کن کارکردگی کے بعد پاکستانی ٹیم مینجمنٹ اوول میں افتخار احمد کو موقع دینے کا ارادہ رکھتی ہے جو آف اسپن باؤلنگ کا گر بھی جانتے ہیں۔

پاکستانی ٹیم کے کوچ مکی آرتھر نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ افتخار آف اسپن باؤلنگ اچھی کرتے ہیں، انگلینڈ میں کافی بائیں ہاتھ کے بلے باز ہیں لہٰذا اگر وہ میچ کھیلتے ہیں تو ہمیں ایک اضافی باؤلر کا آپشن میسر ہو گا۔

انہوں نے کہا کہ افتخار کو ٹیم میں شامل کرنے سے قبل ہمیں اس بات کو یقینی بنانا ہو گا کہ وہ ہمارے لیے رنز اسکور کر سکیں کیونکہ ہم پہلے ان سے رنز کرنے اور پھر باؤلنگ کرنے کی امید رکھتے ہیں۔

جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے آرتھر نے کہا کہ پانچویں باؤلر کو کھلانے کا آپشن بھی زیر غور ہے لیکن جو بھی کھیلے گا وہ مڈل آرڈر میں بیٹنگ کی صلاحیت کا حامل ہونا چاہیے تاکہ ہماری ٹیل لمبی ہو سکے۔

لارڈز ٹیسٹ میچ میں دس وکٹیں لینے والے یاسر شاہ کے حوالے سے کوچ نے کہا کہ لیگ اسپنر سے انگلش وکٹوں پر ہر میچ میں اسی طرح کی امید رکھنا زیادتی ہے تاہم ہمیں امید ہے کہ وہ اوول میں زیادہ وکٹیں لیں گے کیونکہ یہاں کی وکٹ میں ٹرن ہونے کے ساتھ ساتھ باؤنس بھی ہے۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz