'اصل امتحان آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ'

19 October 2016

پاکستان کرکٹ ٹیم کے ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے ویسٹ انڈیز کے خلاف سیریز کے دیگر میچوں میں ٹیم کی جانب سے بہترین کارکردگی کی امید کرتے ہوئے آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے دورے کو اصل امتحان قرار دے دیا۔

ڈان نیوز سے گفتگو کرتے ہوئے مکی آرتھر کا کہنا تھا کہ ‘مجھے پوری امید ہے کہ ٹیم اچھا کھیلے گی اور دوسرے ٹیسٹ میں اپنی کارکردگی کو بہتر کرے گی’۔

پاکستان ٹیم نے ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلے ڈے اینڈ نائٹ ٹیسٹ کی پہلی اننگز میں شاندار بلےبازی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 3 وکٹوں پر 579 رنز بنائے تھے تاہم دوسری اننگز میں پوری ٹیم صرف 123 رنز پر ڈھیر ہوگئی تھی۔

قومی ٹیم کے کوچ نے کہا کہ ٹیسٹ ٹیم کی کارکردگی حالیہ سیریز میں تسلی بخش رہی ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘انگلینڈ میں ٹیم کی کارکردگی بڑی حوصلہ افزا تھی اور یہی جوش کئی سالوں تک طویل کیا جاسکتا ہے’۔

یاسر شاہ نے ٹیسٹ میں بہترین صلاحیتوں کا مظاہرہ کرتے ہوئے 17 میچوں میں اپنے کیریئر کی 100 وکٹیں مکمل کیں جو ایشیا کا ریکارڈ ہے جبکہ پاکستان کی جانب سے بھی تیز ترین 100 وکٹیں حاصل کرنے والے باؤلر بن گئے ہیں۔

لیگ اسپنر ٹیسٹ کرکٹ کی تاریخ میں تیز ترین 100 وکٹیں حاصل کرنے والوں کی فہرست میں مشترکہ طورپر دوسرے نمبر پر ہیں اور یہ ریکارڈ ٹیسٹ کی تاریخ میں 85 سال کے طویل عرصے بعد برابر ہوا ہے۔

مکی آرتھر نے یاسر شاہ کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ ‘ یاسر ایک غیرمعمولی باؤلر ہیں اور وہ مستقبل میں پاکستان کے چمپیئن باؤلر ہوں گے’۔

آرتھر کا کہنا تھا کہ ‘آسٹریلیا اور نیوزی لینڈ کے خلاف آنے والے دورے ٹیم کے لیے حقیقی امتحان ہوں گے لیکن میں ٹیم کے ساتھ اس چیلنج سے نمٹنے کے لیے پرعزم ہوں’۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو سیریز کے پہلے ٹیسٹ میں ڈیرن براوو کی جرات مندانہ بلےبازی اور بشو کی تباہ کن باؤلنگ کے باوجود 56 رنز سے شکست دے کر سیریز میں 0-1 کی برتری حاصل کی ہے۔

سیریز کا دوسرا ٹیسٹ 21 اکتوبر کو ابوظہبی میں شروع ہوگا اور تیسرے ٹیسٹ کا آغاز 30 اکتوبر کو شارجہ میں ہوگا۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz