پی ایس ایل2 کی ڈرافٹنگ، فائنل لاہور میں ہوگا

20 October 2016

دبئی: پاکستان سپر لیگ(پی ایس ایل) کے دوسرے ایڈیشن کے لیے کھلاڑیوں کا انتخاب (ڈرافٹنگ) دبئی میں برینڈن مک کولم اور کیون پیٹرسن سمیت مشہور کھلاڑیوں کی موجودگی میں ہوا۔

ڈرافٹنگ کا عمل شروع ہونے سے قبل پی ایس ایل کے چیئرمین نجم سیٹھی نے خطاب کرتے ہوئے لیگ کے دوسرے ایڈیشن کا فائنل لاہور میں کرانے کا اعلان کیا۔

آئی سی سی کرکٹ اکیڈمی دبئی میں پی ایس ایل کی ڈرافٹنگ تقریب کا آغاز رنگارنگ ٹیبلو سے ہوا۔ پی ایس ایل کی پانچوں فرنچائز کے گانوں پر فنکاروں نے شاندار پرفامنس دکھائی جبکہ پہلے ایڈیشن کے یادگار لمحات کی جھلکیاں بھی دکھائی گئیں۔

نجم سیٹھی کا مزید کہنا تھا کہ انکی کوشش ہے کہ پی ایس ایل کو ہرقسم کے تنازع اور سیاست سے دور رکھیں اور ملک میں انٹرنیشنل کرکٹ کی واپسی کو یقینی بنایا جائے۔

نجم سیٹھی نے کہا کہ ہم نے وعدہ کیا تھا کہ پی ایس ایل کا دوسرا ایڈیشن عوام کی خواہشات کے مطابق پہلے سے زیادہ کامیاب ہو گا۔

ڈرافٹنگ کے عمل میں پہلے کھلاڑی کے انتخاب کا اختیار لاہور قلندرز کو ملا جس کے بعد کراچی کنگز، پشاور زلمے، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز اور آخر میں موجودہ چیمپیئن اسلام آباد یونائیٹڈ نے کھلاڑیوں کا انتخاب کیا۔

ڈرافٹنگ کے عمل کا آغاز پلاٹینم کیٹیگری کے پہلے راؤنڈ سے ہوا جس میں لاہور قلندرز نے سب سے پہلے نیوزی لینڈ کے سابق کپتان اور جارح مزاج بلے بازبرینڈن مک کولم کا انتخاب کیا۔

کراچی کنگز نے اپنی باری میں ویسٹ انڈین اسٹار کرس گیل کو منتخب کیا جنہوں نے گزشتہ ایڈیشن میں لاہور قلندرز کی نمائندگی کی تھی۔

اس کے بعد پلاٹینم کیٹیگری میں پشاور زلمے نے شاہد آفریدی، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے کیون پیٹرسن اور اسلام آباد یونائیٹڈ نے مصباح الحق کو برقرار رکھا۔

پلاٹینم کیٹیگری کے دوسرے راؤنڈ میں لاہور قلندرز نے اسٹار ویسٹ انڈین اسپنر سنیل نارائن کو لینے کا اعلان کیا۔

کراچی کنگز نے ویسٹ انڈیز کے اسٹار کھلاڑی کیرون پولارڈ کو منتخب کیا۔

پشاور زلمے نے اپنی باری میں انگلینڈ کی ایک روزہ ٹیم کے کپتان آئن مورگن کو منتخب کرنے کا اعلان کیا۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے پلاٹینم کیٹیگری میں اپنی دوسری باری میں ٹیم کے کپتان سرفراز احمد کو برقرار رکھا۔

اسلام آباد نے شین واٹسن کو برقرار رکھنے کا اعلان کیا۔

لاہور قلندرز نے پلاٹینم کیٹیگری میں اپنی تیسری اور آخری باری میں گزشتہ پی ایس ایل میں سب سے زیادہ رنز بنانے والے عمر اکمل کو اپنی ٹیم میں برقرار رکھنے کا اعلان کیا۔

کراچی کنگز نے آل راؤنڈر شعیب ملک جبکہ پشاور زلمے نے اپنی باری میں اسپیڈ اسٹار وہاب ریاض کو برقرار رکھا۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے لگاتار تیسری مرتبہ کوئی تبدیلی نہ کرتے ہوئے گزشتہ سیزن میں کوئٹہ کی نمائندگی کرنے والے احمد شہزاد کو اپنی ٹیم کا حصہ رکھا۔

دفاعی چمپیئن اسلام آباد یونائٹڈ نے ویسٹ انڈین آل راؤنڈر آندرے رسل کو دوبارہ حاصل کیا۔

ڈائمنڈ کیٹیگری میں لاہور قلندرز نے سہیل تنویر، کراچی کنگز نے محمد عامر اور پشاور زلمے نے شکیب الحسن کو منتخب کیا۔

کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ڈائمنڈ کیٹیگری میں ویسٹ انڈیز کے کارلوس بریتھ ویٹ جبکہ اسلام آباد یونائیٹڈ نے شرجیل خان کی خدمات حاصل کیں۔

لاہور قلندرز نے ڈیرن براوو، کراچی کنگز نے روی بوہارہ اور پشاور زلمے نے ڈیرن سیمی کو برقرار رکھا۔

اس موقع پر شاہد آفریدی نے ٹیم کی قیادت سیمی کو سونپنے کا اعلان کرتے ہوئے کہا ڈیرن سیمی کو ویسٹ انڈین کرکٹ بورڈ نے عزت نہیں دی لیکن ہم جانتے ہیں کہ چیمپیئن کو کیسے عزت دی جاتی ہے۔

اس کے ساتھ ساتھ پشاور زلمی نے مایہ ناز پاکستانی بلے باز یونس خان کو مینٹور بنانے کا اعلان کیا۔

کوئٹہ گیلیڈی ایٹرز نے لیوک رائٹ اور اسلام آباد یونائیٹڈ نے محمد عرفان کو اپنے دستے میں برقرار رکھا۔

ڈائمنڈ کیٹیگری کے تیسرے راؤنڈ میں لاہور قلندرز نے یاسر شاہ، کراچی کنگز نے کمار سنگاکارا، پشاور زلمے نے محمد حفیظ، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے انور علی کی خدمات حاصل کیں جبکہ سیمیول بدری اسلام آباد یونائیٹڈ کا حصہ ہوں

گولڈ کیٹگیری میں پہلا انتخاب لاہور قلندرز کا تھا جس نے نیوزی لینڈ کے بلے باز اینٹون ڈیویسچ کو حاصل کیا جبکہ کراچی کنگز نے عماد وسیم کو ایک دفعہ پھر اپنی ٹیم کا حصہ بنایا، پشاور زلمی نے کرس جارڈن، کوئٹہ گلیڈی ایٹر انگلینڈ کے ٹیمل ملز اور اسلام آباد نے محمد سمیع کو منتخب کیا۔

کراچی کنگز نے نوجوان بلے باز بابراعظم کو گولڈ کیٹگری راؤنڈ 2 میں حاصل کیا, لاہور قلندرز نے محمد رضوان، پشاور زلمی نے بنگلہ دیشی بلے باز تمیم اقبال، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے عمرگل اور اسلام آباد یونائیٹڈ نے خالد لطیف کو برقرار رکھا۔

گولڈ کیٹگری راؤنڈ 3 میں لاہور قلندرز نے جنوبی افریقہ کے آل راؤنڈرکیمرون ڈیل پورٹ، کراچی کنگز نے جنوبی افریقہ کے ہی آل راؤنڈر ریان مک لارن, پشاور زلمی نے کامران اکمل، اسلام آباد یونائیٹڈ نے آسٹریلیا کے بریڈ ہیڈن اور کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے ذولفقار بابر کو حاصل کیا۔

سلور کٹیگری کے پہلے راؤنڈ میں لاہور قلندرز نے فخرزمان، اظہرعلی،عامر یامین اور ظفر گوہر، کراچی کنگز نے خرم منظور، سہیل خان، سیف اللہ بنگش، شاہ زیب حسن، کاشف بھٹی، پشاور زلمی نے، افتخار، جنید خان، صہیب مقصود، عمران خان جونیئر، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے عمرامین، محمد نواز، اسد شفیق، محمد نبی اور سعد نسیم، اسلام آباد یونائیٹڈ نے سعید اجمل، رومان رئیس، عمران خالد، آصف علی اور سیم بلنگز کو برقرار رکھا۔

سلور کیٹگری 2 میں لاہور قلندرز نے بلاول بھٹی، کراچی کنگز نے کاشف بھٹی، پشاور زلمی نے حارث سہیل کو برقرار رکھا۔

ایمرجنگ کیٹگری میں لاہور قلندرز نے غلام مدثر، عثمان قادر، کراچی کنگز نے ابراراحمد اور عبدالامیر، پشاور زلمی نے حسن علی اور محمد اصغر، اسلام آباد یونائیٹڈ نے عماد بٹ اور حسین طلعت، کوئٹہ گلیڈی ایٹر نے نورولی حسان خان کومنتخب کیا۔

سپلیمنٹری کیٹگری 1 میں لاہور قلندرز نے نیوزی لینڈ کے گرانٹ ایلیٹ اور آسٹریلیا کے شان ٹیٹ کو حاصل کیا، اسلام آباد یونائیٹڈ نے ڈوون اسمتھ اور بین ڈکٹ، پشاور زلمی نے الیکس ہیلز اورافغانستان کے کھلاڑی شہزاد محمدی، کراچی کنگز نے سری لنکا کے سابق کپتان مہیلا جے وردھنے اور اسامہ میر، کوئٹہ گلیڈی ایٹرز نے انگلینڈ کے ڈیوڈ ویلی اور جمیکین رومین پاول کو منتخب کیا۔

 Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz