یاسر 120 سال پرانا عالمی ریکارڈ توڑنے کے قریب

18 July 2016

پاکستانی لیگ اسپنر یاسر شاہ پر قسمت کی دیوی ان دنوں خاصی مہربان ہے اور لارڈز ٹیسٹ میں دس وکٹوں کی فتح گر کاردگی کے بعد وہ ٹیسٹ کرکٹ میں باؤلرز کی عالمی درجہ بندی میں پہلے نمبر پر فائز ہو چکے ہیں۔

2014 میں ڈیبیو کے بعد سے یاسر شاہ نے عالمی سطح پر انتہائی شاندار کھیل کا مظاہرہ کیا ہے اور متحدہ عرب امارات میں آسٹریلیا اور انگلینڈ کے خلاف عمدہ باؤلنگ کی بدولت ٹیم کی فتح میں اہم کردار ادا کیا اور ٹیسٹ کرکٹ میں سعید اجمل کی کمی کو بھی پورا کر کے راتوں رات اسٹار بن گئے۔

اس دوران مثبت ڈوپ ٹیسٹ کے سبب ان پر تین ماہ کی پابندی عائد کی گئی لیکن غیرمتزلزل عزم کے حامل یاسر شاہ نے ہمت نہ ہاری اور لارڈز ٹیسٹ میں شاندار انداز میں کم بیک کرتے ہوئے دس وکٹیں لے کر مین آف دی میچ کا اعزاز حاصل کیا۔

صرف یہی نہیں بلکہ اس بہترین کارکردگی کی بدولت وہ ٹیسٹ میں عالمی نمبر ایک باؤلر بھی بن گئے ہیں اور 20 سال بعد یہ اعزاز حاصل کرنے والے پہلے پاکستانی ہیں۔

تاہم اب یاسر ایک ایسا ریکارڈ توڑنے کے قریب ہیں جو گزشتہ 120 سال میں کوئی نہیں توڑ سکا۔

صوابی سے تعلق رکھنے والے یاسر 13 ٹیسٹ میچوں میں 86 وکٹیں لے چکے ہیں اور 100 وکٹوں کی تکمیل سے محض 14 وکٹ کے فاصلے پر ہیں اور اگر وہ آئندہ دو ٹیسٹ میچوں میں یہ کارنامہ انجام دے دیتے ہیں تو وہ عالمی ریکارڈ بنا دیں گے۔

ٹیسٹ کرکٹ میں سب سے تیزی سے 100 وکٹیں مکمل کرنے کا ریکارڈ انگلینڈ کے جیورج الفریڈ لومین کے پاس ہے جنہوں نے 1896 میں 16 ٹیسٹ میچوں میں 100 وکٹوں کا سنگ میل عبور کیا تھا اور 120 سال گزر جانے کے باوجود ان کا یہ ریکارڈ آج تک کوئی نہیں توڑ سکا۔

پاکستان کی جانب ٹیسٹ کرکت میں وکٹوں کی تیز ترین سنچری کا ریکارڈ سعید اجمل کے پاس ہے جنہوں نے 19 ٹیسٹ میچوں میں یہ اعزاز حاصل کیا۔

اگر یاسر اگلے دو ٹیسٹ میچوں میں 14 وکٹیں لے لیتے ہیں تو 15 ٹیسٹ میچوں میں 100 وکٹیں مکمل کر کے سب سے تیز ترین وکٹوں کی سنچری کا عالمی ریکارڈ بنا دیں گے۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz