مکی آرتھر قومی ٹیم کی بیٹنگ پر برہم

17 October 2016

پاکستانی ٹیم کے کوچ مکی آرتھر نے ویسٹ انڈیز کے خلاف دوسری اننگ میں قومی ٹیم کے 123 رنز پر ڈھیر ہونے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے ہم نے بشو کو آسانی سے آٹھ وکٹیں دیں اور اب ان کے پاس میچ جیتنے کا نادر موقع ہے۔

ویسٹ انڈیز کے خلاف پہلی اننگ میں 579 رنز تین کھلاڑی آؤٹ پر اننگ ڈکلیئر کرنے کے بعد ویسٹ انڈین ٹیم کو 357 رنز پر ٹھکانے لگانے کے بعد مصباح الحق نے فالو آن کرانے کے بجائے خود بیٹنگ کا فیصلہ کیا۔

222 رنز کی برتری کے ساتھ قومی ٹیم نے دوسری اننگ شروع کی تو پوری ٹیم بشو کی باؤلنگ کے سامنے ریت کی دیوار ثابت ہوئی اور انہیں آٹھ وکٹیں دے کر 123 رنز ہر پویلین لوٹ گئی۔

پاکستان نے ویسٹ انڈیز کو جیت کیلئے 346 رنز کا ہد دیا جس کے جواب میں ویسٹ انڈیز نے دو وکٹ کے نقصان پر 95 رنز بنا لیے ہیں اور انہیں اب بھی جیت کیلئے 251 رنز درکار ہیں۔

دوسری اننگ میں قومی ٹیم کی ناقص بیٹنگ پر ہیڈ کوچ مکی آرتھر نے ناراضی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے دوسری اننگ میں ڈھیر ہو کر ویسٹ انڈیز کو میچ جیتنے کا موقع فراہم کردیا ہے، فالو آن نہ کرا کر ہمارا منصوبہ تھا کہ 45 اوورز میں 180 رنز بنا کر ویسٹ انڈیز کو میچ سے باہر کردیں۔

انہوں نے دویندرا بشو کی تعریف کرتے ہوئے کہا کہ جس طرح بشو نے باؤلنگ کی اس پر وہ کے مستحق ہیں لیکن میرے خیال میں ہم نے انہیں بہت آسان وکٹیں دیں، ہم نے چند غلط شاٹس کھیلے۔ ہم نے میچ میں برتری لینے کیلئے بہت سخت منت کی لیکن ایک سیشن میں گیارہ رنز کے عوض چھ وکٹیں گنوا کر ویسٹ انڈیز کو میچ جیتنے کا موقع فراہم کردیا کیونکہ ہم بہت برا کھیلے۔

دوسری جانب 49 رنز کے عوض آٹھ وکٹیں لینے والے دویندرا بشو نے کہا کہ میں نے وکٹوں کو ہدف بناتے ہوئے سیدھی گیندیں کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

انہوں نے کہا کہ پہلی اننگ میں میں نے تمام گیندیں باہر کیں جس کی وجہ سے پاکستانی کھلاڑی آرام سے گیند کو کٹ کر کے سنگل لے لیتے تھے لہٰذا اس مرتبہ میں نے محض سیدھی گیندیں کرنے کی کوشش کی۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz