پی ٹی آئی کا جلسہ دھرنے میں بدل سکتا ہے: انٹیلی جنس رپورٹس

22 April 2016

اسلام آباد (آن لائن) وفاقی حکومت اور پاکستان تحریک انصاف نے 24 اپریل کو اپنے تیر ترکش نے نکالنے کی تیاریاں مکمل کر لی ہیں۔ ضلعی انتظامیہ اسلام آباد کو پی ٹی آئی کے جلسے کے انعقاد کے خوف نے گھیر رکھا ہے۔ مختلف انٹیلی جنس رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ تحریک انصاف کی قیادت وزیراعظم کا ستعفیٰ لئے بغیر نہیں جائے گی۔ تحریک انصاف نئے آئی جی کی موجودگی میں نیا دھرنا دے سکتی ہے حساس اداروں کی رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ پانچ سو سے ایک ہزار تک لوگ اگر جلسے کے بعد دھرنا دیکر بیٹھ گئے تو حکومت کیلئے بہت مشکلات پیدا ہو جائیں گی۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم میاں نواز شریف وفاقی کابینہ اور اپنے سیاسی حلیفوں سے پانامہ لیکس کے عفریت سے بچ نکلے وفاقی دارالحکومت میں مسلسل صلاح مشورے کر رہے ہیں وزیراعظم اور ان کے ساتھی پانامہ لیکس کے ایشو پر چوبیس اپریل کو تین نکاتی ایجنڈے پر غور کر رہے ہیں حکومت عمران خان کے دھرنے کو غیر موثر کرنے کیلئے چوبیس اپریل کوعدالتی کمیشن کا اعلان کر کے معاملے کو طول دینے میں سنجیدہ ہے اور اگر چوبیس اپریل تک کسی بھی جج کی خدمات حاصل نہ ہو سکیں تو پھر حکومت اپوزیشن کے سپرد کرنے کا اعلان کرنے کا ارادہ رکھتی ہے اور بعدازاں زور دے گی کہ اس کا سربراہ حکومتی پارٹی سے ہوا اور اگر یہ تیز بھی کارگرنہ ہو تو وزیراعظم پانامہ لیکس کا معاملہ پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس کے سپرد کرنے کا اعلان کر سکتے ہیں۔

Source . Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz