سندھ اسمبلی میں سندھی کوقومی زبان قرار دینے کی قرارداد منظورکر لی گئی، ایم کیو ایم کی مخالفت

27 September 2016

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) سندھ اسمبلی میں سندھی زبان کو قومی زبان قرار دینے کی قرارداد منظور کر لی گئی ۔

ابتک نیو زکے مطابق سندھی زبان کو قومی زبان قرا ردینے کے حوالے سے فنگشنل لیگ کی قرارداد ایم کیو ایم ارکان کی مخالفت کے باوجود منظور کر لی گئی ۔ قرارداد پر بات کی اجازت نہ دینے پر حکومتی وزراءنے اسمبلی سے واک آوٹ کردیا۔

سندھ اسمبلی اجلاس ڈپٹی سپیکر شہلا رضا کی سربراہی میں ہوا جہاں فنگشنل لیگ کی رکن نند کمار نے قرار داد پیش کی تاہم ایم کیو ایم کی جانب سے قرارداد کی مخالفت کی گئی مگر اس کے باوجود ایوان نے قرار داد منظور کر لی ۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ سید سردار احمد نے کہا کہ قومی زبان کا درجہ نہیں دیا جا سکتا کیونکہ قائد اعظم نے واضع کیا تھا کہ صرف اردو زبان ہی قومی زبان ہوگی حیران کن طور پر سینیئر وزیر نثار کھوڑو نے بھی قرارداد پر اعتراض اٹھاتے ہوئے کہا کہ سندھی کو قومی زبان کا درجہ دینے سے باقی زبانوں کا کیا ہوگا؟وزیر ثقافت سید سردار شاہ نے سید سردار احمد کی مخالفت کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ انگریزوں نے بھی سندھی زبان کو دفتری زبان کے طور پر نافذ کیا ہمیں اردو پر کوئی اعتراض نہیں لیکن ہزاروں سال کی زبانوں کو اہمیت دینی چاہیئے۔

ڈپٹی اسپیکر کی جانب سے سندھی زبان کے لئے پیش کی جانے والی قرارداد میں بات کرنے سے روکنے پرحکومتی اراکین ناراض ہوگئے اور ایوان سے واک آوٹ کر گئے ، واک آو¿ٹ کرنے والوں میں امداد پتافی، نواب تیمور ٹالپربھی شامل تھے ۔

 Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz