معروف قوال امجد صابری قاتلانہ حملے میں ہلاک

22 June 2016

کراچی کے علاقے لیاقت آباد میں فائرنگ کے نتیجے میں ایک شخص ہلاک اور ایک کے زخمی ہونے کی اطلاعات سامنے آئی ہیں۔

ڈان نیوز کے مطابق پولیس کا کہنا ہے کہ لیاقت آباد میں معروف قوال امجد صابری کی گاڑی پر فائرنگ کی گئی۔

پولیس کے مطابق امجد صابری اپنے ساتھی کے ہمراہ گاڑی میں جارہے تھے، کہ اسی دوران لیاقت آباد نمبر 10 کے علاقے میں موٹر سائیکل سوار ملزمان نے ان کی گاڑی پر فائرنگ کی۔

فائرنگ کے نتیجے میں گاڑی میں سوار دونوں افراد شدید زخمی ہوگئے جنہیں عباسی شہید ہسپتال منتقل کیا جا رہا تھا تاہم امجد صابری زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے راستے میں ہی دم توڑ گئے۔

پولیس حکام کا کہنا تھا کہ جائے وقوع سے 30 بور کی 5 گولیوں کے خول ملے، امجد صابری کو کئی گولیاں ماری گئیں جبکہ واقعے میں زخمی ہونے والے دوسرے شخص کی شناخت سلیم صابری کے نام سے ہوئی۔

عباسی شہید ہسپتال کے ہیلتھ سروسز کے سینئر ڈائریکٹر نے بھی امجد صابری کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ امجد صابری ہسپتال پہنچنے سے قبل کی ہلاک ہوچکے تھے۔

صابری عہد

45 سالہ امجد صابری معروف قوال غلام فرید صابری کے صاحبزادے ہیں اور عصر حاصر میں قوالی کے شعبے میں صف اول کے قوال مانے جاتے ہیں۔

مقبول صابری نے اپنے بھائی مرحول غلام فرید صابری کے ساتھ مل کر دنیا بھر میں قوالی کو متعارف کرایا اور عارفانہ کلام میں اپنا نمایاں مقام بنایا۔

والد اور چچا کے انتقال کے بعد امجد صابری ان کے ورثے کو آگے بڑھارہے تھے اور انہوں نے اپنی محنت سے قوالی کی دنیا میں اپنی علیحدہ پہچان بنالی تھی۔

صابری برادان نے جو بھی کلام پڑھا وہ لوگوں کے دلوں میں اتر گیا تاہم ان کے سب سے مشہور و مقبول کلاموں میں ’بھر دو جھولی میری‘، ’تاجدار حرم ہو نگاہ کرم‘ اور ’میرا کوئی نہیں ہے تیرے سوا‘ شامل ہیں۔

امجد صابری نے متعدد ہندی فلموں کیلئے بھی قوالیاں ریکارڈ کرائی ہیں۔

امجد صابری کی ہلاکت کی خبر آتے ہی مختلف سیاسی رہنماؤں اور فنکاروں سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی سے تعلق رکھنے والے افراد کی جانب سے دکھ اور افسوس کا اظہار کا سلسلہ شروع ہو گیا۔

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ترجمان نعیم الحق نے ڈٓان نیوز سے بات کے دوران امجد صابری کی ہلاکت پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کہ اب وقت آگیا ہے کہ کراچی میں دہشت گردوں کے خلاف عبرتناک اقدامات کیے جائیں۔

انہوں نے کہا کہ کراچی میں امن و امان کا نظام پوری طرح تباہ ہوچکا ہے، جس کی بحالی کے لیے انقلابی تبدیلیوں کی ضرورت ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہمیں دہشت گردی کے خلاف حکمت عملی کا ازسر نو جائزہ لینے کی ضرورت ہے، دہشت گردوں کو ٹی وی پر دکھانے کے بجائے 24 گھنٹے میں ان کے کیس کا فیصلہ کرکے انہیں سزا دینی چاہیے۔

معروف گلوکارہ حدیقہ کیانی نے بھی امجد صابری کی ہلاکت پر ان کے اہل خانہ کے ساتھ دکھ اور افسوس کا اظہار کیا۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz