اکٹھی 3طلاقیں دیناخلاف شریعت ہے, 50سے زائد مفتیان کرام کا فتویٰ

20 June 2016

لاہور(ویب ڈیسک)تنظیم اتحاد امت کے شریعہ بورڈ کے 50سے زائد مفتیان کرام نے تین طلاقیں اکٹھی دینے کو خلاف شریعت قرارد دیتے ہوئے ایسے مردوں کے خلاف سخت قانون سازی کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

تنظیم اتحادا مت پاکستان کے چیئرمین اور ناظم اعلیٰ اتحادا مت اسلامک سنٹر محمد ضیاءالحق نقشبندی کی اپیل پر جاری ہونیوالے فتویٰ میں وفاقی اورصوبائی حکومتوں سے کہا ہے کہ وہ فور ی طورپرایسے مرد حضرات کو جیلوں میں ڈالیں کیونکہ تین طلاقیں ایک وقت میں دینے سے خاندانی ومعاشرتی بگاڑ میں اضافہ ہورہا ہے۔ ہنستے مسکراتے گھر تباہ ،مطلقہ عورتوں اوربچوں کا مستقبل برباد ہوجاتا ہے۔

اتوار کو جاری بیان میں مشترکہ طورپر تمام اراکین نے ایک حدیث مبارکہﷺ کا حوالہ دیتے ہوئے کہاکہ طلاق اسلام میں سب سے زیادہ ناپسندیدہ کاموں میں سے ایک ہے ۔ضیاء الحق نقشبندی نے مقامی میڈیا کو بتایاکہ حضرت محمد ﷺ نے ایک ہی نشست میں تین طلاقوں کی ممانعت کی ہے اور حضرت عمرؓ کے دورحکومت میں تین طلاقیں اکٹھی دینے والے مردوں کو سخت سزائیں سنائی گئیں ۔ اُن کاکہناتھاکہ  شرعی طورپر مخصوص عرصے میںصرف ایک طلاق دینے کی اجازت ہے ، پہلی دوطلاقیں منسوخ ہوجاتی ہیں لیکن تیسری نہیں ۔

Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz