جانے کہاں گئے وہ دن ؟؟؟ اپنے پیاروں کوعید کارڈ ز بھیجنے کی روائیت دم توڑنے لگی ،اس سال بھی واضح کمی دیکھنے میں آئی

4 July 2016

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)عید کارڈز کے تبادلوں میں کمی کا رجحان برقرار،سوشل میڈیا ،مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ’’ٹویٹر ‘‘اور ٹیکسٹ میسجز نے اپنے پیاروں کو عید کے مواقع پر کارڈ ز بھیجنے کی خوبصورت روائیت دم توڑنے لگی ۔

نجی ٹی وی کے مطابق اس سال بھی عید الفطر کے موقع پر روایتی عید کارڈز کے تبادلوں میں کمی دیکھی گئی جس کی وجہ ایس ایم ایس اور انٹر نیٹ کی جدید ٹیکنالوجی کا فروغ ہے۔ عید کے موقع پر بڑی تعداد میں لوگ اپنے پیاروں کو بڑے ذوق شوق سے عید کارڈز کے ذریعے مبارکباد دیتے تھے لیکن اب اس رجحان میں کمی آ گئی ہے ۔ عید کارڈ فروخت کرنے والے ایک دکاندار کا کہنا تھا کہ بہت کم تعداد میں لوگ عید کارڈ کی خریداری کیلئے آتے ہیں، اس کا کہنا تھا کہ وہ ہر سال خوشنما اور دیداہ زیب عید کارڈ فروخت کیلئے لاتا ہے تاہم لوگوں کی دلچسپی میں کمی آ رہی ہے ۔ اس نے مزید کہا کہ ایس ایم ایس اور انٹر نیٹ پر عید کی مبارکباد عید کارڈ کا نعم البدل نہیں ہوسکتے ، عید کارڈ ایک یاد گاری پیغام ہوتا ہے جو خصوصی طور پر محبت اور خلوص کا احساس دلاتا ہے ۔

ایک خاتون امبر  شہزاد نے بتایا کہ وہ ہرسال اپنے تمام رشتہ داوں کو باقاعدہ عید کارڈ بھیجتی ہے ، یہ روایت قائم رہنی چاہئے، عید کارڈ مشرقی روایت ہے جو طویل عرصہ سے جاری ہے ، ایس ایم ایس یا انٹر نیٹ عید کارڈز کا نعم البدل نہیں ہوسکتے ، عید کارڈ کا سلسلہ جاری رہنا چاہئے اور لوگوں کو عید کی مبارکباد کے پیغامات عیدکارڈز کے ذریعے ہی دینے چاہئیں کیونکہ ہر شخص انٹر نیٹ اور موبائل کی استطاعت نہیں رکھتا جبکہ عید کارڈ زیادہ سے زیادہ 50 یا 60 روپے میں آسانی سے دستیاب ہیں۔

Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz