گورنر سندھ میدان میں آگئے ،پہلی مرتبہ اپنا وہ روپ دکھا دیا جو آج تک کسی نے نہ دیکھا تھا

19 October 2016

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک )گورنر سندھ نے طویل عرصے کی خاموشی کے بعد دھواں دار خطاب کردیا جس میں نہ صرف انہوں نے مصطفی کمال کو آڑے ہاتھوں لیا بلکہ ایک سیاسی جماعت کے خلاف بھی خوب برسے ۔ان کا کہنا ہے کہ مصطفی کمال بائی پالر کے مریض اور ذہنی پستی کا شکار ہے ۔انہوں نے کہا کہ شہر قائد میں ہونے والی ٹارگٹ کلنگ کے پیچھے ملوث عناصر ،سانحہ بلدیہ کے ملزمان ،سانحہ 12مئی کو ملزمان ،گینگ وار کے ملزمان ،حکیم سعید اور عظیم طارق کے قاتلوں کو سزائیں دلوائیں گے۔

کراچی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے گورنر سندھ نے کہا کہ سابق سٹی ناظم مصطفی کمال الطاف حسین کے را سے تعلقات کے بارے میں جاننے کے باوجود سینیٹر شپ سے استعفیٰ نہیں دے رہے تھے ،انہیں بلوا کر استفعا مانگا گیا ۔انہوں نے کہا کہ سابق سٹی ناظم انتہائی گھٹیا ،کم ظرفی،ذہنی پستی اور بائی پالر کا شکار ہیں ،مصطفی کمال اوجھا کیمپس آئیں ان کے ذہنی توازن کا علاج ہو جائے گا ۔ان کا کہنا تھا کہ حکیم سعید قتل سے متعلق معلومات ملی ہیں جس پر کام کر رہے ہیں،اس کیس میں کچھ ایسے لوگ سامنے آئے ہیں جو بڑے پارسا بنے ہوئے تھے ،اس حوالے سے ٹھوس شواہد ملنے کے بعد کیس کو دوبارہ کھولیں گے ۔انہوں نے کہا کہ گینگ وار کے معاملات پھر شروع ہو گئے ہیں ،اس کے خلاف بھی سخت کارروائی کی جائے گی ۔

گورنر سندھ نے کہا کہ سانحہ بلدیہ فیکٹر ی میں معاوضے کی رقم سے ضمیر فروشوں نے عیاشی کی اور اسلحہ خریدا ،کراچی میں پکڑا گیا اسلحہ فوج ،رینجرز اور پولیس سے لڑنے کے لیے خریدا گیا تھا جس میں ایک سیاسی جماعت کے مقامی رہنما شامل ہیں ۔انہوں نے کہا کہ 12مئی 2007کو جس نے قتل و غارت گری کی اسے چوراہے پر لٹکائیں گے ،اس دن قتل و غارت گری کرنے والا خواہ کسی بھی جماعت سے تعلق رکھتا ہو ،عبرتناک سزا دیں گے ۔

اس سے قبل کراچی کے علاقے دنبہ گوٹھ میں اسکول اور ٹراما سینٹر کے افتتاح کی تقریب کے موقع پر گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد نے پاک سرزمیں پارٹی کے رہنما اور سابق مئیر کراچی مصطفٰے کمال کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ ان کا کہنا تھا کہ کرپشن یا نااہلی کے باعث شہر میں ترقیاتی کام نہ ہو سکا۔ نعمت اللہ خان نے شہر کے لئے زبردست کام کیا۔ گورنر سندھ ڈاکٹر عشرت العباد خان کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں بھتہ خوروں اور چائنہ کٹنگ کرنے والوں کو نہیں چھوڑا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا ارشد وہرا اچھے آدمی ہیں شہر کی بہتری کے لئے انکا ساتھ دیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ دہشت گردوں بھتہ خوروں اور چائنہ کٹنگ کرنے والوں کو نہیں چھوڑا جائے گا۔ جس نے بلدیہ فیکٹری میں آگ لگائی ان کو نہیں بخشا جائے گا۔

ان کا کہنا ہے کہ کوئی شخص کسی غلط ایکٹیوٹی میں پایا گیا اس کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔ شہر میں جو ترقیاتی کام ہونا چاہئے تھے وہ نہیں ہو سکے۔ آٹھ سال میں لیاری ایکسپریس پر بھی کام نہیں ہو سکا۔ شہر میں پانی کے مسائل کو حل کرنا چاہیے تھا ، جس میں کافی وقت لگا دیا گیا۔ انہوں نے کہا دو سال میں پانی کے مسائل کا حل نکال لیا جائے گا۔ ان کا مزید کہنا ہے کہ سپرہائی وے پر تعمیراتی کام کے باعث لوگوں کو مشکلات کا سامنا ہے۔ ایک ڈیڑھ سال کا وقت لگے گا ، تعمیر ہونے میں تب تک اس کا کوئی بہتر حل نکالا جا ئے۔ سپرہائی وے پر مختلف جامعات کے کیمپس قائم کئے جائیں گے۔

Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz