ایف بی آئی حملہ آور کا آئی فون کھولنے میں کامیاب

امریکی محکمۂ انصاف کا کہنا ہے کہ ایف بی آئی سان برناڈینو کے حملہ آور کا فون ایپل کمپنی کے مدد کے بغیر کھولنے میں کامیاب ہو گئی ہے جس کے بعد ان کی جانب سے دائر مقدمہ ختم کردیا گیا ہے۔
ایپل کمپنی ان عدالتی احکامات کی مزاحمت کر رہی تھی جن میں رضوان فاروق کے موبائل میں موجود مواد تک حکام کو رسائی فراہم کرنے کو کہا گیا تھا۔
لیکن اب امریکی حکام کا کہنا ہے کہ انھوں نے خود ہی یہ کام کر لیا ہے لہذا عدالتی احکامات واپس لے لیے جائیں۔

رضوان فاروق اور ان کی اہلیہ نےسان برناڈینو میں حملہ کر کے 14 افراد کو ہلاک کر دیا تھا۔ بعد ازاں انھیں بھی سکیورٹی اہلکاروں نے گولی مار دی تھی۔

گذشتہ ہفتے پراسیکیوٹر نے کہا تھا کہ ایک بیرونی فریق نے ایپل کی مدد کے بغیر ہی آئی فون کو ان لاک کرنے کا ایک ممکنہ طریقہ بتایا تھا۔

اس حوالے سے عدالتی کارروائی کو محکمۂ انصاف کے کہنے پر اس وقت تک کے لیے ملتوی کر دیا ہے جب تک حکام آئی فون تک رسائی حاصل کرنے کے نئے طریقے کی جانچ نہیں کر لیتے۔
اس بارے میں ایپل کا کہنا ہے کہ وہ نہیں جانتے کہ انھیں یہ رسائی کیسے ملی اور انھوں نے امید ظاہر کی ہے کہ حکومت آئی فون کی اس کمزوری کو ان کے ساتھ ضرور شیئر کرے گی تاکہ اسے بھی آئی فون کی اس کمزوری کا علم ہو۔  

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz