6 گھنٹے سے کم نیند قبل از موت کا خطرہ بڑھائے

13 July 2016

نیند صحت کے لیے کتنی ضروری ہے اس حوالے سے کچھ کہنے کی ضرورت نہیں کیونکہ اکثر رپورٹس میں اس کی تصدیق ہوچکی ہے۔

مگر اس کی کمی کیا نقصان پہنچا سکتی ہے ؟ درحقیقت 6 گھنٹے سے کم نیند قبل از وقت موت کا خطرہ 12 فیصد تک بڑھا دیتی ہے۔

یہ انتباہ ایک برطانوی طبی تحقیق میں سامنے آیا۔

برٹش سلیپ کونسل کی اس تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ نیند کی کمی صحت کے متعدد مسائل کا باعث بنتی ہیں جن میں ذیابیطس، موٹاپا اور امراض قلب قابل ذکر ہیں۔

تحقیق میں بتایا گیا ہے کہ نیند کی کمی بہت تیزی سے عام ہونے والا مسئلہ ہے کیونکہ بیشتر افراد نیند کو اہمیت ہی نہیں دیتے۔

تحقیق کے مطابق اکثر افراد اس بات سے ہی لاعلم ہیں کہ نیند انسانی صحت کے لیے کتنی اہمیت رکھتی ہے اور اس کو کتنی ترجیح دی جانی چاہئے۔

تحقیق میں بتایا گیا کہ کم سونے سے جسم میں ایسے ہارمونز کا اخراج زیادہ ہوتا ہے جو تناﺅ کی سطح بڑھاتے ہیں جس کے نتیجے میں دل کی دھڑکن تیز اور بلڈ پریشر بڑھ جاتا ہے جو کہ مختلف طبی مسائل کا باعث بنتا ہے۔

محققین نے اتباہ کیا کہ 6 گھنٹے سے کم نیند کو معمول بنالینا توجہ اور یاداشت وغیرہ پر اثر انداز ہوتا ہے اور جان لیوا الزائمر امراض کا خطرہ بھی بڑھ جاتا ہے۔

اس سے قبل گزشتہ سال سرے یونیورسٹی کی ایک تحقیق میں یہ بات بھی سامنے آئی تھی کہ چھ گھنٹے سے کم نیند کی عادت کے نتیجے میں جسم کے اندر 700 سے زائد جینز میں تبدیلیاں آتی ہیں اور اس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ یہ عادت صحت کے کتنے مسائل کا باعث بن سکتی ہے۔

نوٹ: یہ مضمون عام معلومات کے لیے ہے۔ قارئین اس حوالے سے اپنے معالج سے بھی ضرور مشورہ لیں۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz