سانپ زہریلا ہے یا نہیں؟ صرف دور سے دیکھ کر ہی پتہ لگانے کا آسان طریقہ جانئے

5 May 2016

لندن(مانیٹرنگ ڈیسک) سانپ کو دنیا بھر میں دہشت کی علامت سمجھا جاتا ہے حالانکہ اس کی بہت کم ایسی اقسام ہیں جو اس قدر زہریلی ہیں کہ آدمی کی جان لے سکیں۔ ماہرین کے مطابق زیادہ تر اقسام کے سانپ اگرچہ زہریلے تو ہوتے ہیں مگر ان سے ہلاکت ہونے کا خدشہ نہیں ہوتا یا پھر انتہائی کم ہوتا ہے۔ اب ماہرین نے سانپ کو دور سے دیکھ کر ہی اس کے زہریلا ہونے کا اندازہ لگانے کا آسان طریقہ بتا دیا ہے۔

برصغیر پاک و ہند میں کئی اقسام کے سانپ پائے جاتے ہیں جن میں اکثر زہریلے ہیں ۔ مگر ان میں 4اقسام ایسی ہیں جو بکثرت پائی جاتی ہیں اور ہلاکت خیز حد تک زہریلی بھی ہیں۔ان میں پہلی قسم کوبرا سانپ کی ہے جسے عموماً مداریوں کے پاس بھی دیکھا جاتا ہے اور پاکستان و بھارت کے شہری اس نسل سے بخوبی واقف ہیں۔ اس کی لمبائی 3فٹ سے 6فٹ تک ہوتی ہے اور اسے سر کافی چوڑا ہوتا ہے ۔ بوقت ضرورت یہ اپنے سر کو پھن کی صورت میں پھیلا لیتا ہے۔ ہمارے ہاں پائی جانے والی سانپوں کی دوسری زہریلی ترین قسم کریٹ ہے۔ کریٹ نسل کے سانپ کے سر کے اوپر ایک طرح کی ڈھال بنی ہوتی ہے اور اس کے پیٹ پر چوڑی طشتریوں کی مانند ایک ساخت بنی ہوتی ہے۔ اس کی دم گول ہوتی ہے۔ اس کی لمبائی 4فٹ سے 6فٹ تک ہوتی ہے اور اس کا سر اس کی گردن کی نسبت قدرے بڑا ہوتا ہے۔ اس کی آنکھیں مکمل سیاہ ہوتی ہیں۔ یہ عموماً خشک اور تاریک جگہوں کو اپنا مسکن بناتا ہے۔

زہریلے سانپوں کی تیسری قسم رسلز وائپر ہے۔ اس کا جسم بھورے رنگ کا ہوتا ہے جس میں سرخ اور پیلے رنگ کی بھی آمیزش ہوتی ہے۔ اس کے جسم پر گہرے بھورے اور سیاہ رنگ کے آنکھ کی ساخت سے مشابہہ کئی نشان موجود ہوتے ہیں جو سر سے لے کر دم تک موجود ہوتے ہیں۔اس کا سر تکونی اور گردن کے قریب سے چوڑا ہوتا ہے۔ اس کی زبان ارغوانی مائل سیاہ رنگت کی ہوتی ہے۔ چوتھی قسم کے انتہائی زہریلے سانپوں کی قسم کو ”سا سکیلڈ وائپر“ (Saw-Scaled Viper) کہا جاتا ہے۔ یہ پاکستان اور بھارت میں پائی جانے والی وائپرز کی رسلز وائپر کے بعد دوسری بڑی قسم ہے۔ ان کی لمبائی 15انچ سے 30انچ تک ہوتی ہے۔ ان کی رنگت مختلف ہوتی ہے۔ان کی رنگت گہرے بھورے، سرخ، گرے یا پھر ان تمام رنگوں کا آمیزے پر مشتمل ہوتی ہے جس پر ہلکے پیلے یا بھورے رنگ کے دھبے اور گہرے رنگ کی لائنیں ہوتی ہیں۔ یہ جب رینگتے ہیں تو ان کے جسم سے ایک آواز پیدا ہوتی ہے۔ یہ دنیا میں سانپوں کی چند انتہائی زہریلی قسموں میں سے ایک ہے۔

Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz