ذیا بیطس صرف زیادہ میٹھا کھانے کی وجہ سے نہیں ہوتی، وہ ایک چیز جس کی جسم میں کمی آپ کو ذیابیطس کا مریض بناسکتی ہے

24 May 2016

نیویارک(نیوزڈیسک)ذیابیطس ایک موذی مرض ہے اور ہمیشہ ہی سے یہ سمجھا جاتا تھا کہ یہ میٹھا کھانے کی وجہ سے ہوتی ہے لیکن اب امریکی سائنسدانوں نے انکشاف کیا ہے کہ جسم میں وٹامن اے کی کمی کی وجہ سے بھی لاحق ہوسکتی ہے۔
نیویارک کے ویل کارنیل میڈیکل کالج کی تحقیق کے مطابق ہمارے جسم میں وٹامن اے کی کمی کی وجہ سے ذیابیطس لاحق ہوسکتا ہے۔تحقیق کاروں کا کہنا ہے کہ وٹامن اے کی مناسب مقدار ہمارے لبلبے کو صحیح طرح سے کام کرنے میں مدد دیتی ہے۔وٹامن اے کی موجودگی کی وجہ سے لبلبے میں بیٹا سیلز بہتر طریقے سے کام کرتے ہوئے خون میں گلوکوز کی مقدار کو نارمل سطح پر رکھتے ہیں۔ماہرین کا کہنا ہے کہ وٹامن اے وہ وٹامن ہے جسے ہمارا جسم خودبخود پیدا نہیں کرتا بلکہ مختلف غذاﺅں کے استعمال سے انہیں جسم میں پہنچایا جاتا ہے۔وٹامن دو ذرائع وے حاصل ہوتا ہے ، ریٹی نوئیڈز جو کہ جانوروں سے حاصل ہوتا ہے اور دوسر ا ذریعہ بیٹا کیروٹین ہے جو کہ پودوں اور نباتات سے حاصل ہوتا ہے۔آئیے آپ کو وٹامن اے والی غذاﺅں کے بارے میں بتاتے ہیں تاکہ آپ انہیں استعمال کرکے ذیابیطس جیسے خطرناک مرض سے محفوظ رہ سکیں۔
میٹھے آلو
ہمارے ہاں یہ آلو زیادہ پسند نہیں کئے جاتے لیکن اگر آپ ان کی مقدار بڑھادیں گے تو آپ کو وٹامن اے کی وافر مقدار مل سکے گی۔
گاجریں
انہیں بیٹا کیروٹین کا بڑا اور سستا ذریعہ سمجھاجاتا ہے۔آپ چاہیں تو گاجروں کو ابال کریا کچا کھاسکتے ہیں۔
سبز پتوں والی غذائیں
پالک، ساگ،سلاد کے پتے زیادہ استعمال کریں کہ اس میں بھی آپ کو وٹامن اے ملے گی۔
آڑو
آج کل مارکیٹ میں آڑو بہت کثیر تعداد میں موجود ہیں لہذا انہیں جی بھر کے کھائیں۔
آم اور تربوز
یہ دونوں پھل پاکستان میں کم قیمت میں مل جاتے ہیں ۔ان کے استعمال سے بھی وٹامن اے ملے گا۔

Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz