انگلیاں چٹخانے پر جوڑوں پر کیا اثرات مرتب ہوتے ہیں؟

22 August 2016

انگلیوں کے جوڑ چٹخانا اکثر افراد کی عادت ہوتی ہے مگر ایسا کرنے پر اندر ہوتا کیا ہے، کیا اس بارے میں آپ کو علم ہے؟

یا یوں کہہ لیں کہ آخر انگلیاں چٹخانے پر آواز کیوں آتی ہے؟

تو اس کا جواب کینیڈا میں ہونے والی ایک طبی تحقیق میں سامنے آیا ہے۔

البرٹا یونیورسٹی کی تحقیق میں انگلیوں کو چٹخانے پر جوڑوں کے اندر اثرات کا جائزہ ایم آر آئی اسکین کے ذریعے لیا گیا۔

نتائج سے معلوم ہوا کہ چٹخانے کے نتیجے میں پیدا ہونے والی آواز درحقیقت سینوویال فلوئیڈ (رطوبت زلالی) میں گیس بھرنے کے نتیجے میں ابھرتی ہے۔

سینوویال فلوئیڈ ایسا پتلی رطوبت ہوتا ہے جو انسانی جسم کے بیشتر جوڑوں کے درمیان موجود خلاءکو بھرتا ہے۔

تحقیق کے مطابق جب انگلیوں کو چٹخایا جاتا ہے تو یہ کچھ ایسا ہی ہوتا ہے جیسے خلاءپیدا کیا جائے کیونکہ ایسا کرنے سے جوڑ کی سطح اچاک الگ ہوتی ہے جس کے نتیجے میں آواز پیدا ہوتی ہے۔

اس حوالے سے الٹرا ساﺅنڈز کی مدد سے بھی جائزہ لیا گیا کیونکہ یہ ٹیکنالوجی ایم آر آئی کے مقابلے میں پچاس سے سو گنا زیادہ تیزی سے چیزوں کو کیچ کرتی ہے۔

نتائج سے اس بات کی تصدیق ہوئی کہ ایسا کرنے سے دباﺅ میں ہونے والی تبدیلی کے نتیجے میں رطوبت میں پیدا ہونے والے بلبلے چٹخنے کی آواز پیا کرتے ہیں۔

اور ہاں انگلیاں چٹخانے کی عادت کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ یہ جوڑوں کے امراض یا دیگر طبی مسائل کا باعث بنتی ہے۔

تاہم محققین کا کہنا ہے کہ اس ھوالے سے قابل اعتبار شواہد موجود نہیں کہ انگلیاں چٹخانا کسی قسم کے مسئلے کا باعث بنتا ہے۔

دوسری جانب کیلیفورنیا یونیورسٹی کی ایک نئی تحقیق میں بھی بتایا گیا ہے کہ اس عادت کے کسی قسم کے مضر اثرات مرتب نہیں ہوتے مگر محققین کے بقول اس کا کوئی خاص فائدہ بھی نہیں۔

Source. Dawn News

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz