ایکواڈور میں زلزلے کے بعد 160آفٹرشاکس،ہلاکتوں کی تعداد 300،امدادی کام جاری

18 April 2016

کیٹو(مانیٹرنگ ڈیسک)لاطینی امریکہ کے ملک ایکواڈور میں حکام کا کہنا ہے کہ ہفتے کو آنے والے زلزلے میں ہلاک ہونے والے افراد کی تعداد تین سو کے قریب پہنچ گئی جبکہ ڈھائی ہزار سے زیادہ افراد زخمی ہوئے ہیں۔حکام کے مطابق زلزلے کی شدت ریکٹر اسکیل پر 7.8 ریکارڈ کی گئی تھی اور اسے ایکواڈور کی تاریخ کا بدترین زلزلہ قرار دیا جا رہا ہے۔ زلزلے کے بڑے جھٹکوں کے بعد 160 سے زائد آفٹر شاکس آ چکے ہیں۔ اس زلزلے سے سب سے زیادہ متاثر ایکواڈور کے شمالی ساحلی علاقے ہوئے ہیں۔زلزلے سے بڑے پیمانے پر تباہی ہوئی ہے اور سینکڑوں مکانات منہدم ہوچکے ہیں جبکہ سڑکیں اور بجلی کا نظام تباہ ہوگیا ہے۔

متاثرہ علاقوں میں امدادی کارروائیاں جاری ہیں جن میں دس ہزار فوجی اور ساڑھے 3 ہزار پولیس اہلکار بھی شریک ہیں۔علاوہ ازیں ہمسایہ ممالک کولمبیا اور میکسیکو سے بھی امدادی ٹیمیں ایکواڈور پہنچ گئی ہیں۔

حکام کے مطابق زلزلے سے ملک کے شمال مغربی ساحلی علاقے زیادہ متاثر ہوئے ہیں اور ایسے ہی ایک قصبے پیڈرنالس کے میئر کا کہنا ہے کہ وہاں منہدم ہونے والے ہوٹلوں کے ملبے میں سینکڑوں لاشیں موجود ہو سکتی ہیں۔

ایکواڈور کے صدر نے ملک میں ہنگامی حالت کے نفاذ کا اعلان کیا ہے اور وہ اٹلی کا دورہ مختصر کر کے وطن واپس آ گئے ہیں۔صدر رافیئل کوریا نے کہا ہے کہ اس وقت ترجیح زندہ بچ جانے والے افراد کی تلاش ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ ’سب کچھ دوبارہ تعمیر کیا جا سکتا ہے لیکن زندگی دوبارہ نہیں مل سکتی اور یہی سب سے تکلیف دہ چیز ہے۔‘

Source . Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz