فرانسیسی شہر نیس میں قومی دن کی تقریبات کے دوران دہشت گرد نے ہجوم پر ٹرک چڑھا دیا، 84افراد ہلاک، 140 سے زائد زخمی ، صدر نے3 ماہ کیلئے ایمرجنسی بڑھا دی

15 July 2016

پیرس(مانیٹرنگ ڈیسک)فرانس کے شہر نیس میں قومی دن کی تقریبات کے موقع پر ایک دہشت گرد  نے ہجوم پر ٹرک چڑھا دیا جس کے نتیجے میں 84افراد ہلاک جبکہ 140سے زائد زخمی ہو گئے ہیں۔قومی دن کی تقریبات کے موقع پر لوگ ساحلی شہر نیس میں آتش بازی کا مظاہرہ  دیکھنے کیلئے جمع تھے۔فرانسیسی وزارت داخلہ نے بھی واقعے میں بچوں سمیت 84 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کر دی ۔

برطانوی میڈیا کے مطابق  فرانس کے ساحلی شہر نیس میں قومی دن کی تقریبات جاری تھیں جس میں سینکڑوں افراد شریک تھے تاہم اس دوران ایک دہشت گرد نے ٹرک ہجوم سے ٹکراد یا اور کئی میٹر دور تک لوگوں کو روندتا چلا گیا جس کے نتیجے میں 84 افراد ہلاک ہو گئے جنکہ 140 سے زائد زخمی ہو گئے ۔

ٹرک میں جدید اسلحہ اور ڈیٹونیٹر بھی تھا تاہم فرانسیسی صدر نے واقعے میں بچوں سمیت 77 افراد کی ہلاکت کی تصدیق کرتے ہوئے ملک میں نافذ ایمرجنسی میں مزید تین ماہ کی توسیع کا اعلان کر دیا ہے۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ ٹرک ڈرائیور گاڑی کو دائیں بائیں موڑتا رہا تاکہ زیادہ سے زیادہ لوگ کچلے جا سکیں ۔

فرانسیسی میڈیا کا مزید کہنا ہے کہ ٹرک ڈرائیورنے لوگوں کو کچلنے کے بعد فائرنگ بھی کی جس سے زیادہ جانی نقصان ہوا تاہم پولیس کی جوابی فائرنگ سے حملہ آور بھی مارا گیا جس کی شناخت بھی ہو گئی ہے اور اس کا تعلق بھی شہر نیس سے ہی بتایا جاتا ہےجو پولیس کو بھی مطلوب تھا ۔ڈرائیور نے 50 کلو میٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے 2 کلو میٹر تک ٹرک کو بھگایا اور بعد میں فائرنگ بھی کی تاہم پولیس کی جوابی فائرنگ سے حملہ آور مارا گیا جس کے قبضے سے شناختی کارڈ ببھی برآمد ہوا ہے جبکہ ٹرک کے مالک کا تاحال پتہ نہیں چل سکا۔

واقعے کے بعد نیس کے ہسپتالوں  میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے جبکہ زخمیوں کو طبی امداد  کیلئے ہسپتالوں میں منتقل کر دیا گیا ہے۔دہشتگردی کے موقع پر نیس میں سیکیورٹی سخت کر دی گئی ہے اور  اس موقع پر نیس کے میئر کرسچن سٹراسی نے شہریوں کو گھروں میں رہنے کی ہدایت دی ہے۔

فرانس کے صدر فرانسس اولاندے نے حملے سے متعلق پریس کانفر نس کرتے ہوئےکہا کہاس بات سے انکا ر نہیں کیا جا سکتا کہ یہ دہشت گردحملہ تھا اور حملہ آور کی شناخت بھی ہو گئی ہے جو تیونس نژاد فرانسیسی شہری تھا اور تعلق نیس سے تھا ۔
فرانسیسی صدر کا مزید کہنا تھا کہ حملے میں متعدد بچے بھی ہلاک ہوئے ہیں تاہم 20زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے اورحملے کے متاثرین سے اظہار یکجہتی کیلئے جمعہ  کو نیس کا دورہ کروں گا ۔ انہوں نے مزید کہا کہ شام اور عراق میں زیادہ موثر کردار ادا کریں گے ۔

دوسری جانب شہر نیس کے تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی گئی ہے اور زخمیوں کے علاج کیلئے لوگوں سے خون کے عطیات کی اپیل کی جارہی ہے

Source. Daily Pakistan

Leave a Reply

Be the First to Comment!


wpDiscuz